Sign Up

Sign In

Forgot Password

Lost your password? Please enter your email address. You will receive a link and will create a new password via email.

You must login to ask question.

ہماری ویب سائٹ پر آپ کا خیر مقدم ہے۔

Ask A Question

شاہِ کونین کی ہر ادا نور ہے

شاہِ کونین کی ہر ادا نور ہے
انکی سیرت کاہر زاوِیہ نور ہے
ذاتِ سرکار، نورٌعلٰی نور ہے
ابتدا نور ہے ، انتہا نور ہے
نور نے، جسکو بھی کہدیا نور ہے
وہ بھی اک آن میں بن گیا نور ہے
نور سے ہر کوئ مانگتا نور ہے
نور والا نبی ، بانٹتا نورہے
دہر میں جسکو جتنا ملا نور ہے
وہ سبھی میرے سرکار کا نور ہے
بڑھ رہی ہے سدا عظمتِ مصطفیٰ
ہرگھڑی، ہرپَہَر ، اک نیا نور ہے
لمحہ لمحہ منور ہے سرکار کا
ہر حکايت، ہر اک واقعہ نور ہے
روشنی بخش دیتےہیں لکڑی کو بھی
نور والے نبی کی عطا نور ہے
آقامعراج کو،جس طرف سے گئے
آج بھی سارا، وہ راستہ نور ہے
کیسامنظر نبی کی امامت کا ہے
مقتدی نور ہیں مُقتدا نور ہے

بھیج کر رب نےفرمایا “قد جاءکم”
میرےبَندو سنو ! آگیا نور ہے
دیکھ لو، نور کے مُنکِرو دیکھ لو
رب نے خود مصطفیٰ کو کہا نور ہے
جشنِ میلادکی، ہے الگ ہی جھلک
دیکھئے کس قدر خوشنما نور ہے
ہم سمجھ پائیں کیا انکی نورانیت
جتناسمجھیں گےاُس سے سوا نور ہے
جوہرِ فن ، فریدی کا چمکے نہ کیوں
مدحت و نعت کا مشغلہ نور ہے